دہشت گردی کو جڑ سے ختم کرنے کے لیے نیشنل ایکشن پلان تیزی سے جاری

تازہ ترین— دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے وفاقی حکومت نے ایکشن پلان پر تیزی سے کام کرنا شروع کر دیا ہے ہے- وفاقی حکومتfederal government نے دہشت گردی  کو جڑ سے اکھارنے کے لیے نیشنل ایکشن پلان پر بہت تیزی سے عملدرآمد تیزی سے شروع کر دیا

حکومت کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کو اس پورے ملک سےاکھاڑ دے گے- ملک بھرمیں 9 لاکھ 29 ہزار 405 مشکوک افراد کے کوائف چیک کئے گئے۔ چاروں صوبائی ایپکس کمیٹیوں کےاب تک 32 اجلاس منعقد ہوئے ،9 فوجی عدالتوں کو 73 مقدمات بھجوائے گئے۔

انٹیلی جنس کی بنیاد پر آپریشنز میں سیکیورٹی اداروں نے 75 ہزار سے زیادہ ملزمان کوگرفتار جبکہ 214 مجرمان کو پھانسی دے دی گئی۔پیر کو نجی ٹی وی کے مطابق چاروں صوبوں میں 65ہزار سے زیادہ سرچ آپریشنز میں سے 5 ہزار 962 انٹیلی جنس بنیادوں پر کئے گئے- سزائے موت پر پابندی ختم ہونے کے بعد 214 افراد کو پھانسی دی جا چکی ہے۔

سول عدالتوں میں ، فرقہ وارانہ دہشتگردی کے 62 کیسز میں سے 5 خیبر پختونخوا، 53 بلوچستان اور چار کیس اسلام آباد میں زیرالتوا ہیں۔ بلوچستان میں مفاہمتی عمل اور ترقیاتی پروگرام ساتھ ساتھ جاری ہے

Leave a Reply