رواں ماہ دھماکہ ہوگا پھر سب ختم ہوجائے گا۔

Apocalypse Prediction Says World will End In Decemberنیویارک (تازہ ترین) خلاءکی وسعتوں سے زمین کی طرف بڑھتی ہلاکت خیز تباہی کی خبریں گاہے بگاہے سامنے آتی رہی ہیں اور اب ایک دفعہ پھر یہ کہا جارہا ہے کہ ”سیارہ ایکس“ نامی ایک بہت بڑا سیارہ زمین پر تباہی مسلط کرنے والا ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ یہ تباہی کچھ مہینوں یا سالوں میں نہیں بلکہ اسی ماہ یعنی دسمبر 2015ء میں آنے والی ہے ، لہٰذا اس دسمبر کو کرئہ ارض کے خاتمے کا مہینہ قرار دیا جارہا ہے۔

اخبار ڈیلی سٹار کے مطابق شوقیہ ماہرین فلکیات اور اڑن طشتریوں کا مشاہدہ کرنے والوں کا کہنا ہے کہ زمین پر جس تباہی کو اپریل 2016ءمیں آنا تھا اب وہ دسمبر میں ہی آرہی ہے۔ ماہ دسمبر میں زمین کی تباہی پر یقین رکھنے والوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ دنیا بھر کی حکومتوں کو اصل حقیقت کا علم ہوچکا ہے اور وہ خفیہ طور پر اس تباہی کا سامنا کرنے کی تیاری بھی کررہی ہیں لیکن کوئی بھی حکومت اپنے عوام کو اصل خوفناک حقیقت سے آگاہ نہیں کررہی۔
اخبار ڈیلی سٹار کا کہنا ہے کہ رواں سال اکتوبر میں ایک انتہائی بڑی چٹان بھی زمین کے قریب سے گزری اور امریکی خلائی تحقیق کے ادارے ناسا اور یورپین سپیس ایجنسی نے اب اعتراف کیا ہے کہ وہ واقعی کسی بڑی تباہی سے نمٹنے کے لئے ایک منصوبہ تیار کرچکے تھے جس کے مطابق زمین کو تباہی کا خطرہ لاحق ہونے پر اس کی طرف بڑھتی چٹان کو انتہائی طاقتور میزائلوں کے ذریعے تباہ کیا جانا تھا۔
دسمبر میں قیامت برپا ہونے کا نظریہ رکھنے والوں کا کہنا ہے کہ سیارہ ایکس زمین کے ساتھ اگر نہ بھی ٹکرایا تو یہ اتنا قریب سے گزرے گا کہ اس کی کشش براعظموں کو الٹ پلٹ کر رکھ دے گی اور کرہ ارض پر کوئی چیز سلامت نہیں رہے گی۔ عنقریب تباہی کا نظریہ رکھنے والوں کا تو یہ بھی کہنا ہے کہ اس خوفناک خطرے نے امریکا اور روس جیسے بڑے مخالفین کو بھی یکجا کردیا ہے جو خفیہ طور پر اپنے خصوصی دستوں کی مشترکہ ٹریننگ کررہے ہیں تاکہ وہ مل کر اس خطرے سے نمٹنے کے لئے اقدامات کرسکیں۔ سیارہ ایکس یا جسے Nibiru بھی کہا جاتا ہے، کے زمین کے ساتھ ٹکرا کر سب کچھ تباہ کردینے کا نظریہ پہلی دفعہ 1976ءمیں سامنے آیا۔ اب اس نظریے کے حامیوں کا کہنا ہے کہ اس بڑی تباہی کا وقت آن پہنچا ہے۔ واضح رہے کہ تاحال کسی بھی عالمی شہرت یافتہ ماہر فلکیات کی طرف سے اس نظریے کی تصدیق نہیں کی گئی۔

Leave a Reply