گوشت سے کینسر کا خطرہ۔۔۔

Danger of cancer from meat

اسلام آباد(تازہ ترین) صحت کے عالمی ادارے ڈبلیو ایچ او نے کہا ہے کہ جو گوشت پراسیسڈ ہوتا ہے اس سے کینسر ہونے کا خطرہ لا حق ہو سکتا ہے۔اپنی رپورٹ میں ادارے نے کہا ہے کہ روزانہ 50 گرام پراسیسڈ گوشت کھانے سے آنتوں کے کینسر کا خطرہ 18 فی صد بڑھ جاتا ہے۔ اس کے علاوہ ان کا کہنا ہے کہ بڑے جانوروں  کے گوشت سے کینسر کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے جبکہ اس کے بہت محدود ثبوت ملے ہیں برطانیہ میں کینسر کے ادارے کینسر ریسرچ یوکے کا کہنا ہے کہ اس لئےبڑے گوشت اور پراسیسڈ گوشت کھانے میں کمی کی جانی چاہیے نہ کہ اسے بالکل ہی ترک کردیا جائے ۔

 خیال رہے کہ گوشت کو زیادہ دنوں خراب ہونے سے بچانے کے لیے یہ پھر اس کے مزے میں تبدیلی کے لیے گوشت کو پراسیس کیا جاتا ہے اور اس کے طریقوں میں جوش دینا، دھواں دینا، سکھانا، نمک اور دوسرے تحفظ کے طریقے شامل ہیں۔ یہ بھی  کہا جاتا ہے کہ پراسیسنگ میں شامل کیمائی عمل سے کینسر کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ زیادہ آنچ پر پکانا جیسے باربے کیو سے بھی کینسر پیدا کرنے کیمائی مادے پیدا ہو سکتے ہیں۔اس لئے کوشش کرنی چاہیے کہ پراسیسڈ گوشت جتنا ہو سکے کم استعمال کیا جائے۔

Leave a Reply