امریکی ڈالرکی قدر بڑھ گئی

تازہ ترین—  آئی ایم ایف کی جانب سے پاکستانی روپے کے زائدالقدر ہونے کے غیرذمے دارانہ بیان کے بعدamerican doller غیرقانونی منی چینجرز اورسٹے بازوں کی طرف سے امریکی ڈالر کی خریداری نے گزشتہ 2روز میں امریکی ڈالر کی قدر 1روپے سے زائد اضافے سے 107 روپے کے قریب جا پہنچی ہے جبکہ ڈالر کی قدر110 روپے تک پہنچنے کا امکان ہے- اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے نوٹس لیتے ہوئے منگل کو فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان ودیگر منی ایکس چینج کمپنیوں  کے لیے ہنگامی اجلاس طلب کرلیا۔

ذرائع کہ مطابق اسٹیٹ بینک کے ایگزیکٹوڈائریکٹر سید عرفان علی شاہ کو فاریکس ایسوسی ایشن کے چیئرمین ملک محمد بوستان نے بتایا کہ آئی ایم ایف کے ترجمان کی پاکستانی روپے کے اوور ویلیو اوراس کی قدر میں5 تا20 فیصد کمی کے غیرذمے دارانہ بیان نے غیرقانونی منی چینجرز اورسٹے بازوں کے حوصلے کو بڑھا دیا ہے-

جس میں ڈالر کی قدر کو کنٹرول کرنے کے لیے مشترکہ حکمت عملی کے تحت تمام ایکس چینج کمپنیوں کوبدھ سے این بی پی اور ایچ بی ایل ایکس چینج کمپنیوں کے توسط سے ڈالرفراہم کرنے کا فیصلہ ہوا ہے۔ ملک بوستان نے نی جی ٹی وی کو بتایا کہ ایکس چینج کمپنیوں کو فی ڈالر105.90 روپے کے حساب سے سپلائی کی جائے گی جو وہ 106.20 روپے پرفروخت ہوسکےگی۔

انہوں نے روپے کی بے قدری پراسٹیٹ بینک کے فوری نوٹس لیتے ہوئے ڈالر کے طلب گاروں سے اپیل کی ہے کہ وہ سٹے بازوں نے جو افوہیں پھیلائی ہیں ان  کی منفی افواہوں سے متاثر نہ ہوں جنہوں نے ڈالر کی قدر110 روپے تک پہنچنے کی افواہیں پھیلا کر اپنے پاس امریکی ڈالر کو وسیع تعداد میں جمع کررکھے ہیں، عوام کو چاہیے کہ وہ قومی جذبے کے تحت امریکی ڈالر کی خریداری کا اس وقت تک بائیکاٹ کریں جب تک امریکی ڈالر کی قدر106 روپے سے نہ گھٹ جائے۔

 انہوں دعویٰ کیا کہ رواں ہفتے کے اختتام تک امریکی ڈالر کی قدر106 روپے سےکم ہوجائے گی اگزیکٹوڈائریکٹراسٹیٹ بینک نے این بی پی اور ایچ بی ایل ایکس چینج کمپنیوں کو ہدایت کی کہ وہ بدھ کوتمام ایکس چینج کمپنیوں کی ڈالر ڈیمانڈ حاصل کرتے ہی انہیں ان کی ضروریات کے مطابق امریکی ڈالر کی سپلائیکی جائے۔

Leave a Reply