شہابِ ثاقب زمین کے انتہائی قریب

Earth and asteroid are closed

اسلام آباد(تازہ ترین) ناسا نے بتایا ہے کہ 31 اکتوبر کی رات کو  شہاب ثاقب زمین کے انتہائی قریب سے گزرے گا تاہم اس سے زمین کو کوئی نقصان نہیں پہنچے گا۔ ناسا کے مطابق دو ہفتے قبل نظر آنے والا یہ شہابِ ثاقب  31 اکتوبر کو یعنی ہیلوون کی رات زمین کے انتہائی قریب سے گزرے گا لیکن زمین کے کو اس سے کوئی خطرہ نہیں لیکن یہ ایک عجیب قسم کا شہابِ ثاقب ہے جس کی نوعیت زیادہ واضح نہیں جب کہ اس کا حجم ایک میل اور 280 سے 620 میٹر چوڑا ہوسکتا ہے۔ ناسا کا کہنا ہے کہ یہ شہاب ثاقب زمین سے 4 لاکھ 99 ہزار میل کے فاصلے سے گزرے گا تاہم یہ اچانک مڑ جانے والا انوکھا پتھر ہے جو اس سے قبل 1999 میں اے این 10 کے نام سے زمین کے اتنے قریب سے گزرا تھا۔ اس کو عام آنکھ سے دیکھنا ممکن نہیں ہے اس کے لئے ٹیلی اسکوپ کا استعمال ضروری ہو گا۔ بعض ماہرین فلکیات کا کہنا ہے کہ  شہاب ثاقب کا ہیلوون کی رات زمین کے قریب سے گزرنا خطرناک ہو سکتا ہے اور زمین پر تباہی بھی لا سکتا ہے۔

Leave a Reply