گنج پن کو دور کرنے کا طریقہ متعارف

تازہ ترین—-یونیورسٹی کے میڈیکل سینٹر میں گنج پن کی ایک قسم ’ایلوپیشیا اریٹا‘ کو خاص اینزائم والی ایک دواlong hair سے ختم کرنے کا تجربہ کیا گیا جنہیں جینس کائنیز یا جے اے کے کہا جاتا ہے، چوہوں پر تجربات کرنے کے بعد یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ یہ دوا آٹو امیون کے سگنل کو سٹاپ کرتی ہے اور جب دوا کی خاص مقدار لوگوں کو کھلائی گئی تو ان میں گنج پن بھی رک گیا اور ان کے بال دوبارہ آنے لگے۔

گنج پن کی بہت سی اقسام ہیں اور یہ دوا آٹو امین ایلوپیشیا کے لیے ہی تجربہ کیا گیا ہے اور یہ ان دو اقسام کے لیے کارآمد ہے جس میں انسان کا اپنا امنیاتی نظام ہی بالوں کی نشونما کو روکتا ہے اور بال گرنا شروع ہو جاتے ہیں-اور سر پر گنج پن کی صورت اختیار کر لیتا ہےجو بعض صورتوں میں بہت زیادہ ہو  جاتا ہے

ماہرین نے ایک تحقیق جرنل سائنس ایڈوانسس کی تازہ اشاعت میں پیش کیا ہے۔ ماہرین کے مطابق ان کی دوا میں موجود کیمیکل انسانی کھوپڑی کے مسام کو ری اوپن کرکے بالوں کو بہت جلد اگاتا ہے کیونکہ اس سے ان میں بال بنانے کا سگنل ’ کھل‘ جاتا ہے تاہم عمررسیدگی کے ساتھ عام گنج پن کا علاج ابھی دور ہے جس میں مرد اور خواتین میں بھیسر کے خاص حصوں سے بال کم ہوتے جاتے ہیں اور اس کے لیے انہیں مزید تحقیق اور وقت درکار ہے جب کہ انہیں امید ہے کہ فی الحال یہ بالوں کو پتلا ہونے اور گنج پن کو جزوی طور پر روک سکتی ہے۔۔

ماہرین کے مطابق جب دوا کو گنجے چوہوں کے سر پر لگایا گیا تو اس سے حیرت انگیز انکشاف ظاہر ہوا کہ ان کے سروں پرزیادہ مقدار میں بال آنے لگے اس کے علاوہ جب تجربہ گاہوں میں مصنوعی طور پر بالوں کی نشونما کے لیے اس دوا کو ڈالا گیا تب بھی حیرت انگیز طور پر بال اگے۔ امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ اتھارٹی نے اس دوا کو منظور کرلیا ہے۔

Leave a Reply