پیرس میں پھر دھماکہ۔۔۔۔

once again bomb blast in Paris

تازہ ترین)  پیرس میں ہونے والے دھماکوں کے بعد  پورے  پیرس میں سختی کر دی گئی ہے اور اس کے علاوہ پیرس میں مسلمانوں کے لئے بڑی مشکلات کا سامنا ہے۔ ان حملوں کے مجرموں کو پکڑنے کے لئے فرانس حکومت سرگرداں ہے۔ اس سلسلے میں پولیس آپریشن کے دوران  ایک مشتبہ خاتونے خود کو دھماکے سے اڑا لیا، جس کے نتیجےمیں دو مشتبہ دہشت گرد بھی ہلاک ہو گئے۔

پولیس آپریشن پیرس کے شمالی مضافاتی علاقے سینٹ ڈینس میں کیا گیا، اسی علاقے میں جمعہ کو حملے کا نشانہ بننے والا فٹبال اسٹیڈیم ’اسٹیڈ دی فرانس‘ بھی واقع ہے۔پولیس ذرائع کے مطابق حملہ آوروں کی تلاش کے لیے آپریشن مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے چار بجے شروع کیا گیا۔ پیرس کے مضافاتی علاقے میں پولیس آپریشن پیرس حملوں کے مبینہ ماسٹر مائنڈ عبد الحامد اباعود اور دیگر مشتبہ افراد کی موجودگی کی اطلاع پر ایک اپارٹمنٹ میں کیا گیا۔آپریشن کے دوران مشتبہ دہشت گردوں کی فائرنگ سے 3 پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے۔سینٹ ڈینس کے نائب میئر اسٹیفن پیو نے مقامی آبادی کو اپنے گھروں میں رہنے کی ہدایت کی ہے۔اس سے قبل فرانس کے سیکیورٹی ذرائع کا کہنا تھا کہ پیرس حملے کی ویڈیو فوٹیج سے حملوں میں ممکنہ طور پر ملوث نویں حملہ آور کی نشاندہی کی گئی ہے۔

یاد رہےکہ  جمعہ کے روز پیرس میں چھ مختلف مقامات پر دھماکوں میں 129 افراد ہلاک اور 300 سے زائد زخمی ہوئے ہیں۔

Leave a Reply