پاکستان نے واضح کردیا

تازہ ترین) پاکستانی دفترِ خارجہ نے ان رپورٹس کو مسترد کیاہے کہ امریکی فورسز نے افغانستان کے شہر قندوز کے ہسپتال پر فضائی حملہ وہاں موجود  ایک پاکستانی کی اطلاع پر کیا۔  رپورٹس کے مطابق یہqanduuz attack پاکستانی انٹیلی جنس معلومات حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ طالبان کی سرگرمیوں کو بھی  مربوط کررہاتھا۔

ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ترجمان دفترِ خارجہ قاضی خلیل اللہ نے کہا کہ   پاکستان کے ملوث ہونے کے الزامات بے بنیاد ہیں۔  افغانستان کے اندرونی معاملات میں  مداخلت نہ کرنا ہماری افغان پالیسی کا بنیادی ستون ہے۔  کسی کو شُبہ نہیں رہنا چاہیئے کہ  پاکستان افغانستان سمیت کسی بھی ملک کے خلاف اپنی سرزمین استعمال ہونے دے گا۔

یاد رہے کہ امریکی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس  کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکی اسپیشل آپریشنز تجزیہ کاروں کے خیال میں امریکی فورسز نے افغانستان کے شہر قندوز کے ہسپتال پر فضائی حملہ وہاں ایک پاکستانی کی موجودگی کی اطلاع پر کیا  گیا جو  انٹیلی جنس معلومات حاصل کرنے کے علاوہ وہاں موجود افغان طالبان کی سرگرمیوں پر بھی نظر رکھے ہوئے تھا۔  واضح رہے کہ رواں ماہ 3 اکتوبر کو قندوز کے ہسپتال پر امریکی طیاروں کی بمباری میں 22 افراد ہلاک ہوگئے تھے جن میں ہسپتال میں پہلے سے موجود مریض اور ہسپتا ل کا عملہ بھی شامل ہے۔

Leave a Reply