کرکٹ بحالی مزاکرات پر شیو سینا نے حملہ کر دیا۔

(تازہ ترین) بھارت کی ہندو نواز جماعت شیو سینا نے پاکستان کے ساتھ کرکٹ کے روابط بحال کرنے کے لیے بات چیت کرنے پر بھارتی کرکٹ بورڈ کے دفترShev sena attacks on Indian cricket board پر حملہ کیا ہے۔

یہ دھاوا اس وقت بولا گیا جب پاکستانی کرکٹ بورڈ چیئرمین شہریار خان کی صدارت میں ایگزیکٹو کمیٹی کے چیئرمین نجم سیٹھی اس سلسلے میں ممبئی میں بی سی سی آئی کے ہیڈ کوارٹر میں مذاکرات جاری تھے۔شیو سینا کے کارکنوں کی جانب سے بی سی سی آئی کے دفتر پر دھاوے کے بعد سکیورٹی کے خدشات کے سبب انہیں ہوٹل سے باہر نہیں آنے دیا گیا۔

اطلاعات کے مطابق پاکستانی وفد کی سکیورٹی بڑھا دی گئی ہے۔

جس وقت حملہ ہوا اس وقت بھارتی کرکٹ بورڈ کے صدر ششانک منوہر وانکھڑے سٹیم میں واقع بورڈ کے دفتر میں موجود تھے۔

گذشتہ ہفتے پاکستانی کرکٹ بورڈ کے چئیرمین شہریار خان کا کہنا تھا کہ بھارتی کرکٹ بورڈ کے چئیرمین نے انھیں بھارت آنے کی دعوت دی تھی جس کے بعد شہریار خان اور نجم سیٹھی گذشتہ روز بھارت کے لیے روانہ ہوئے تھے۔

شہریار خان نے بتایا کہ انھوں نے سری نواسن کے کہنے پر بھارتی کرکٹ بورڈ کے نومنتخب چئیرمین ششنک منوہر کے ساتھ پاک بھارت سیریز کے بارے میں ٹیلی فون پر بات کی۔

بقول شہریار خان ششنک منوہر کا کہنا تھا کہ ’اب جب کہ میں چیئرمین کرکٹ بورڈ بن گیا ہوں، میرا موقف یہ ہے کہ پاکستان اور بھارت کے کرکٹ بورڈز کے درمیان تعلقات اچھے ہونے چاہیں۔‘

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ ’ششنک منوہر نے مجھے یقین دلایا کہ بھارتی کرکٹ بورڈ کی جانب سے پاکستان کو نقصان نہیں ہونے دیں گے۔‘

انھوں نے کہا کہ ششنک منوہر کے بقول ’ہمارے درمیان جو بھی فیصلے ہوں گے اس کے لیے دونوں ملکوں کی حکومتوں کو منظوری لازمی دینا ہوگی۔

Leave a Reply