ایک اور کھلاڑی نے کرکٹ کو خیر آباد کہہ ڈالا

 تازہ ترین– چند دن پہلے سے ہی یہ خبریں چل رہی تھیں کہ یونس انگلینڈ سے سیریز کھیل کر ون ڈے کرکٹ سےyunis khan ریٹائرمینٹ لے لے گے، ایسا ہونا غلط بھی نہ تھا، چار میچز میں انھیں صلاحیتوں کے اظہارکا موقع بھی مل جاتا اور باعزت انداز سے کھیل کو الوداع کہتے، مگر پہلے میچ سے قبل ایسا اعلا کرنا بالکل بھی ٹھیک نہ تھا ، سب جانتے ہیں کہ انھوں نے ون ڈے کرکٹ میں واپسی کیلیے کتنی کوششیں کیں،میڈیا میں متواتر بیانات ان کے بیانات بھی سامنے آئے کر بورڈ اور سلیکٹرز پر دباؤ بڑھایا، کوچ وقار یونس شمولیت کے حق میں نہ تھے مگر شہریارخان اور ہارون رشید نے ان کی مخالفت مول لے کر یونس خان کو اسکواڈ کا حصہ بنایا۔

سینئر بیٹسمین کی ریٹائرمنٹ کے بعد جب ایک اعلیٰ بورڈ آفیشل سے فون پر بات ہوئی تو انھوں نے طنز بھرے لہجے میں یہ الفاظ کہے اور وہ غلط بھی نہیں تھے، یونس کے اس اعلان نے پی سی بی، سلیکٹرز اور ٹیم سب ہی کے لیے ایک پریشان کن بات تھی، شاید اسی قسم کے اقدامات کی وجہ سے انھیں ملکی کرکٹ میں وہ مقام نہ ملا جس کے وہ حقدار ہیں، کپتان بنے تو عہدہ چھوڑ دیا ، پھر رویے کا مسئلہ آیا تو ساتھیوں نے بغاوت کردی، ورلڈ ٹی ٹونٹی جیتے تو عمران خان بننے کی سوچ دل میں سمائی اور ریٹائرمنٹ کا اعلان کر دیا

آپ مشورہ دے رہے تھے کہ یونس خان کو کپتان بنا دیں، دیکھیں  انہوں نے تو ریٹائرمینٹ کا اعلان کر دیا یہ ان کا حال ہے، پہلے ون ڈے کے موقع پر ہی ریٹائرمنٹ کا اعلان کر دیا، یہ پاکستان کی ٹیم ہے یا گلی محلے کی کوئی سائیڈ جہاں اپنی انا کو تسکین پہنچانے کیلیے عجیب و غریب فیصلے ہو رہے ہیں-

ان دنوں بورڈ کی اپنی ملازمین اور کھلاڑیوں پر گرفت خاصی کمزور ہے، کئی سو صفحات پر مشتمل سینٹرل کنٹریکٹ میں کھلاڑی صرف پیسے کتنے ملیں گے یہ پڑھ کر دستخط کر دیتے ہیں، چیئرمین پی سی بی نے بھی شاید پورا معاہدہ نہیں پڑھا اسی لیے کہہ رہے ہیں کہ یونس نے ڈسپلن کی کوئی خلاف ورزی نہیں کی، میں انھیں یاد دلاتا چلوں کہ کنٹریکٹ کی ایک شق کے مطابق دوران سیریزکوئی بھی کھلاڑی ریٹائرمنٹ کا اعلان نہیں کر سکتا، اس صورت بھاری جرمانہ و دیگر سزائیں منتظر ہوں گی،مگر حالیہ سیریزمیں شعیب ملک کے بعد اب دوسرے کھلاڑی نے ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا، شعیب نے تو خیرپوری ٹیسٹ سیریز میں حصہ لیا یونس تو ایک میچ کے بعد ہی ج، اسی طرواب دے دیا – سوشل میڈیا کے استعمال پر بھی پابندی عائد ہے۔

سپرلیگ کے مسائل نے سیٹھی صاحب کو خوب پریشان کیا ہوا ہے، شہریارصاحب محاذ آرائی سے بچنے کی کوشش میں کنٹرول کھو بیٹھے،ایسے میں اگر کھلاڑی اپنی مرضی کر رہے ہیں  تو اس میں حیرت کی کوئی بات نہیں ہے، آگے آگے دیکھیں ہوتا ہے کیا، یونس خان والے معاملے کے بعد اس وقت سب سے زیادہ خوش وقار یونس ہوں گے، وہ تو یہ کہے گے جو میں کہہ رہا تھا ٹھیک کہہ رہا تھا-

Leave a Reply